تاج نگری کے مسلمانوں نے کیا پروشوتم شری رام کی بارات کا کیا شاندار استقبال

Azhar Umri Agra

آگرہ، تاج نگری کی روایت کے مطابق رات آگرہ کے منکامیشور مندر سے شری رام کی بارات نکالی تو شری رام کے نام کے ساتھ آسمان میں آواز گونج اُٹھیں ، شری رام کی جھانکیوں کو دیکھنے کے لئے سامعین کثیرت تعدا میں موجو رہے، عوام میں بے حد خوشی تھی، بارات جنک محل نربھائی نگر پہنچی ، اس دوران ہندومسلم اتحاد کی ایک جھلک نظر آرہی تھی، بارات کا جگہ جگہ پر استقبال کیا گیا اُور علاقے کے مسلمانوں نے بھی رات بھر جاگ کر بارات کا استقبال کیا ، اس دوران لاگھو ں لوگوں نے شری رام اور دیگر شکلوکو دیکھا ،واضح ہوکہ آگرہ میں ہر سال رام لیلا گراءونڈ میں تاریخی رام لیا کا اہتمام کیا جاتا ہے، اسے شمالی ہند وستان کی سب سے بڈی رام برات سمجھا جاتا ہے، یہاں رام جانکی شادی کی تقریب مختلف طرح سے ادا کی جاتی ہیں ، شہر کے علاقوں سے اپنے یہاں جنک پوری کا مطالبہ کیاجاتا ہے، اُور پھر کسی ایک علاقے میں جنک پوری کو سجایا جاتا ہے، علاقے سے ایک خاندان راجا جنک اُور ان کی خاندان کی کردار ادا کرتا ہے، اُور کوئی دیگر علاقے سے راجا دشرتھ اُور اُن کا خاندان منتخب ہواہے،
منکامیشور مندر کی باراہ دری سے شری رام کی شکل تیار ہوکر نکلتی ہیں اُور رتھ پر سوارہوکر بارات روانہ ہوتی ہے، جنک پوری میں بارات تین دن رُکتی ہے،بارات میں شامل مہمانوں کی مہمان نوازی کی جاتی ہے، مکمل رسومات کے ساتھ جانکی اُور رام کی شکل کی شادی ہوتی ہے،اس کے بعد بدائی کی جاتی ہے، اس مرتبہ تاریخی رام بارات کی استقبال ی ذمہ داری نربھائی نگر رہائشی کو دی گئی ہے ، اس بارات میں ۰۳۱ الگ الگ جھاکی نکلی ،
اُترپردیش سرودلیہ مسلم ایکشن کمیٹی اُور بھارتیہ مسلم ڈویلپمنٹ کونسل کی جانب سے مسلم معاشرے کے لوگوں نے شری رام بارات کے موقع پر جھاکیوں کا استقبال کیا ، اس دوران معاشرے کے تمام لوگوں نے بڈے پیمانے پر حصہ کیا، ہندو مسلم اتحاد کی اس مثال نے شہر محبت کا شہر کے نام کو معنی بنادیا،

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *