خواتین کو ہتھیاروں کی لائسنس جاری کیئے جائیں جس سے خواتین اپنی اُور اپنی بیٹیوں کی حفاظت کر سکیں ، شبانہ 

Azhar Umri Agra

آگرہ، گزشتہ روز علی گڈھ کے ٹپل میں معصوم بچی کے ساتھ ہوئی درندگی کے بعد لوگوں کا استحصال رُوکنے کا نام نہیں لے رہا ہے، معصول ٹونکل کے ساتھ درندگی کرنے والے ملزمان کو کھلے عام پھانسی دینے کے بجائے زندہ جلائے جانے کا مطالبہ شہر کی عوام کے ساتھ تمام تنظیم اُور سیاسی جماعت اپنے اپنے مظاہر ہ ک میں کر ہی ہیں ، خواتین تنظیم بھی اپنی بیٹیوں کی حفاظت کے لئے اپنے ہاتھ میں قانون لینے کے لئے تیار نظر آرہی ہیں ،

شہر کی خواتین تنظیم مہلا سشکت سینا نے ٹپل کے واقعے پر اپنی ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے آگرہ کلکٹریٹ پر مظاہر کیا ، اُور قومی صدر کے نام میمورنڈم دیا، اس موقع پر سینا کی قومی صدر شبانہ نے کہاکہ ٹپل کے واقعے نے ایک باد پھر ملک کو جھک جھور کر رکھ دیا ہے، ملک کی ہر والدہ اپنی بیٹی کی حفاظت کی فکر میں ہے، پولیس خراب ذہنیت کو روکنے میں ناکامیاب ہے، جس کی وجہ سے عصمت دری کے واقعات میں ہر روز اضافہ ہوا ہے، سشکت سینا ا ضلع انتظامیہ سے مطالبہ کرتی ہے کہ وہ خواتین کو ہتھیا ررکھنے کا لائسیس جار ی کرے ، جس سے خواتین خد اپنی اُور اپنی بیٹیوں کی حفاظت کر سکیں ، شبانہ نے کہا کہ اُتر پردیش میں جنگل کی طرح حکومت چل رہی ہے، قانونی نظام کہیں نظر نہیں آرہا ہے، جس کی وجہ سے مجرمانہ اُور عصمت دری کے واقعات میں اضافہ ہو رہاہے،

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *