خواجہ غریب نواز کے پیر و مرشد حضرت خواجہ عثمانِ حاروني کی قل شریف مرکز صابری پر منایا

ٹیونکل شرما کو دی خیراج عقیدت پیش کر سب نے ایک آواز سے قاتلوں کے لئے پھانسی کا مطالبہ کیا

Azhar Umri Agra

آگرہ، خواجہ غریب نواز کے پیر و مرشد حضرت خواجہ عثمانی حاروني کی قل شریف مرکز صابری پر منایا گیا۔ معصوم ٹیونکل شرما کی بھیانک قتل پر مشتعل سرودھرم کے لوگوں نے خیراج عقیدت پیش کی۔ سب نے ایک آواز سے قاتلوں کے لئے پھانسی کا مطالبہ کیا۔
درگاہ حضرت خواجہ شیخ سید فتح الدین بلخی المعاروف تاراشاه چشتی صابری کمپاؤنڈ آگرہ کلب آگرہ میں شہنشاہِ هندوستان حضرت خواجہ معین الدین چشتی اجمیری کے پیر و مرشد حضرت خواجہ عثمانِ حاروني چشتی مکی رحمتہ اللہ علیہ کے عرس مبارک کے موقع پر شوال کی ۶ تاریخ کو قل شریف منظم کیا گیا ۔ قل شریف میں توشہ شریف پر فاتحہ خواني دربارِمرکز صابری کے سجادہ نشين پیر الحاج رمضان علی شاہ نے تمام حاضرین اور مريدین کے درمیان پڑھی ۔ وہیں ملک میں امن چین اور حاضرین ، مريدین کی فالاحئیت کی خاص دعا کی گئی۔ درگاه مرکز صابری کے جنرل سیکرٹری وجے کمار جین نے اس موقع پر سلام پڑھا۔ دعا کرتے ہوئے پیر صاحب نے کہا کہ قل شریف میں حاضری دینے والوں کی حاضری خواجہ عثمانِ حاروني کی بارگاہ میں ہوئی ہے۔ ان بزرگوں کے یہاں کسی طرح کا مذہبی اختلافات نہیں ہوتا ہے۔ ان کےتو پیغام ہی ہر مزہب و ملت اتحاد کے ہوتے ہیں۔ فاتحہ خواني کے موقع پر تمام مزہب کے لوگوں نے معصوم ٹیونکل شرما کی بھیانک قتل پر اپنا غصہ کا اظہار کرتے ہوئے نم آنکھوں سے خراج عقیدت پیش کی اور پیر صاحب نے کہا کہ ایسے قاتلوں کو پھانسی کی سزا جلد سے جلد دی جانی چاہئے۔ اس طرح کے انسان انسانیت کے دشمن ہیں، ان میں معاشرے میں رہنے کا کوئی حق نہیں ہے۔ اس طرح کے لوگ ملک اور معاشرے کے لئے بہت خطرناک ہیں۔
بزرگوں کی بارگاہ کے حوالے سے بات کرتے ہوئے پیر صاحب نے کہا کہ ان بزرگوں کی بارگاہ میں حاضر ہو کر انسان اپنے آپ میں سکون محسوس کرتے ہیں اور آپ کے دامنو کو مرادوں سے بھرا ہوا پاتے ہیں۔
پروگرام میں جنرل سکریٹری وجے کمار جین نے کہا کہ آج انسان سکون کی چاہ میں جگہ جگہ بھٹكتا ہوا گھومتا ہے لیکن سکون اس کے دل کے کسی کونے میں ہی پوشیدہ ہوتی ہے۔ آج ضروری ہے کہ ہم نے روحانیت کا راستہ اپنائے۔ روحانی لوگوں سے رابطہ کریں۔ جب ہم روحانیت کے راستے پر حقیقت سے چل پڑیں گے اور مزہبی کی تشہیر پھیلانے والے صوفی سنتو سے جڈیں گے تو سکون اور خوشحالی خود بخود زندگی میں قائم ہو جائے گی۔
قل شریف کے موقع پر بندو خانصابری، جنرل سیکرٹری وجے کمار جین، حاجی عمران علی شاہ، حاجی قاسم علی شاہ، عبد السعید خان، اومیش چندیل، منوج صابری، سعید صابری، جے سنگھ، انل صابری، حافظ اسلام قادری، ترون صابری، رفیق صابری، كرون صابری، برکت صابری، رمضان خان، ظہیر صابری، سلمان صابری، بشیر صابری، ناظم صابری، ابھینندن جین، پرانشو جین، غلامِ آل پجتني ذین العابدین شاہ صابری، گروپياري صابری، انجو سنگھ صابری، کملیش جین، پريانشي جین، مالتی جین، مایا صابری، افسانہ بیگم، منی صابری، گایتری صابری وغیرہ موجود تھی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *