عظمیٰ ناہید ورلڈ ٹریڈ سینٹر عالمی ایوارڈسے سرفراز

admin

ممبئی:ورلڈ ٹریڈ سینٹر نے عورتوں کی اقتصادی ترقی سے متعلق ایک عالمی کانفرنس ۲۷تا۲۹؍ مارچ کو منعقد کی جس میں دنیا بھر کے ماہرینِ اقتصادیات اور تاجر شریک ہوئے ۔ اس موقع پر مشہور سماجی کارکن محترمہ عظمیٰ ناہید کے خواتین کی فلاح بہبودی اور اقتصادی ترقی کے کاموں سے متاثر ہو کر عالمی ایوارد سے نوازا گیا۔ عظمیٰ ناہید پچھلے پچیس سالوں سے مسلم خواتین کے لئے کام کر رہی ہیں۔خواتین کے پاس ہنر ہے اور عموماً یہ عورتیں بہت کم تنخواہ پر مزدوری کرتی ہیں اور منافع تاجروں کی جیب میں چلا جاتا ہے۔عظمیٰ ناہید کی تنظیم آئیوا (IIWA)  نے غریب اور بے سہارا عورتوں کے روزگار کے لئے بہت سے پروگرام شروع کئے اور انہیں مال فراہم کروایا تاکہ یہ خواتین اپنے ہنر کے ذریعے مختلف مصنوعات بنا سکیں۔

ا یسی غریب خواتین  کے سامنے یہ مسئلہ ہوتا ہے کہ مال کیسے خریدیں اور اپنی مصنوعات کہاں فروخت کریں۔’’ آ ئیوا ‘‘جوخواتین کی تنظیم ہے اس نے مختلف شہروں  میں اپنے سینٹر قائم کرکے ان خواتین کو مال فراہم کر کے ان کی دستکاری اور ہنر کا استعمال کیا اور پھر بڑے شہروں میں نمائشوں کے ذریعے، بڑے شو رومس  میں یا برآمد کرنے والے بڑے تاجروں سے رابطہ کر کے ان کی اعلیٰ قیمت پر فروخت کا انتظام کیا جس سے ان خواتین کی آمدنی کئی گنا بڑھ گئی۔آئیوا کے ذریعے ہندوستان بھر میں خصوصا مہاراشٹر، یوپی اور بہار میں ہزاروں خواتین ڈیڑھ سو سے زائد مصنوعات بنا  رہی ہیں جو ہند اور بیرون ہند میں مقبول ہیں۔ عموماً یہ عورتیں اپنے گھروں سے ہی کام کر رہی ہیں تاکہ وہ اپنی گھریلو ذمے داریوں کو بھی ادا کر سکیں ۔

عظمیٰ ناہید کا خیال ہے کہ جس طرح خیر القرون میں خواتین تجارت کر تی تھیں اسی طرح آج بھی مسلمان خواتین شریعت کے دائرے میں رہتے ہوئے بہت سے کام کر سکتی ہیں اور غریبی اور تنگدستی سے چھٹکارا حاصل کر سکتی ہیں جس سے ان کے بچوں کا مستقبل تباہ ہو رہا ہے۔ مطلقہ اور بیوہ عورتیں بھی کثیر تعداد میں آئیوا کی مختلف اسکیموں سے فائدہ اٹھا رہی ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *