فخرِسلسلہ قادریہ حضرت شاہ عبد اللہ بغدادی گیلانی رضی اللہ عنہ

Azhar Umri Agra

فخرِ سلسلہ قادریہ حضرت شاہ عبداللہ بغدادی گیلانی رضی اللہ عنہ محبی الدین ثانی فرزند وجانشین غوثِ اعظم حضرت شیخ سید عبداللہ بغداری گیلانی رضی اللہ عنہ ۲۱ صدی ہجری کے معروف مبلغ دین اور سلسلہ عالیہ قادریہ کے معروف بزرگ ہیں دہلی کے بادشاہ عالم اور رام پور کے نواب فیض اللہ خان آپ کے مریدوں میں شامل ہیں ، فرنگی محل کے علماء کو بھی حضرت سے عرادت و اجازت تھی سلسلہ عالیہ نیازیہ کے بانی نیاز ہے ، نیازحضور شاہ نیاز احمد قادری چشتی سہروردی نقشبندی رضی اللہ عنہ کے لئے تو حضرت غوث اعظم رضی اللہ عنہ نے بطور خاص اپنے بیعت اور خلافت کا حکم فرمایا اور صاحبزادی صاحبہ سے نکاح کا حکم بھی دیا آج نیازیہ سلسلہ میں قادریہ سلسلہ حضرت شاہ عبداللہ بغدادی صاحب کے واسطے سے اور آپ کی عطا سے ہے ، خانقاہ ذی وقار علیہ نیازیہ کے صاحب سجادہ اور قطب عالم مداد عظم حضرت شاہ نیاز ہے نیاز کے جانشین شیخ الطریقت حضرت شاہ محمد حسنین المعروف حسنی میاں سرکار سلسلہ کی تبلغ اور خدمت خلق میں ہے،مثال کام انجام فرمارہے ہیں ، آپکی ذات سے دنیاں بھر میں لاکھوں لوگ روحانیت کی منازل طے کر رہے ہیں ، حضرت شیخ بغدادی صاحب کے پوری دنیا میں لاکھو کی تعداد میں مریدین موجورہے ،۵۹۱۱ ہجری میں ہندوستان کا آخری صفر کیا بغداد سے ہندوستان میں حضور کی تشریف آوری ہمارے ملک پر احسان عظم ہے، ۹۱۲۱ میں مغرف کے وقت شہر رام میں وصال فرمایا ، آج جہاں مزار ہے، وہ جگہاں حضرت نے خود خویدی تھی نواب رام پور نے بہت کوشش کی کے نزد قبول کر لیں لیکن انکار فرماکر رقم ادا کی اور حکم فرمادیا کہ مجھے اس جگہاں سپرد خاک کیا جائے لحاظ وہیں مزار کی تعمیر ہوئی ،

حضرت شاہ عبداللہ بغدادی گیلانی رضی اللہ عنہ کی آگرہ تشریف آواری پر حضرت کے جلیل القدر خلیفہ سید امجد علی شاہ جعفری قادری کو بیعت فرمایا اور گیاروین شریف کا حکم دیا اور یہاں بھی سینکڈوں لوگو آپ سے بیعت ہوئے حضور بغدادی صاحب اکسر فرماکرتے میں میرے جد نے امجد علی تمہاری تربیت کے لئے یہاں بھیجا ہے، شہر آگرہ میں آج آستا نہ حضرت میکش خانقاہ قادریہ و درگارہ پنجہ شریف ،آستانہ عالیہ قادریہ اور دیوان خانہ سے فیضان ِبغدادی جاری ساری ہے حضرت سید امجد علی شاہ قادری کے جانی اور روحانی جانشین سید محمد اجمل علی شاہ اس تعلیم کو شب و روزعام کرنے کا کام کر رہے ہیں اور صوفیا یہ تعلیمات کی تبلیغ میں مصروف ہیں ،

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *