بی جے پی کا جشن یوم تاسیس :د ہلی پردیش بی جے پی اقلیتی مورچہ کے پروگرام میں مسلم اکثریتی علاقوں سے بسوں میں شرکاء آئے

تقریب سے قبل شرکاء کو’وندے ماترم ‘پڑھنے کی مشق کرائی

admin

نئی دہلی: (سہیل اخترقاسمی) بی جے پی کے۳۸؍ویں یوم تاسیس کے موقع پرریاستی بی جے پی کے اقلیتی مورچہ نے جشن یوم تاسیس کے نام سے ایک تقریب منعقدکی،جس میں بڑی تعدادمیں مسلم اکثریتی علاقوں سے پارٹی اہلکاروں نے شرکت کی۔اقلیتی مورچہ نے تقریب کاعنوان ’جشن یوم تاسیس ‘رکھا،مگرسب کچھ ہندی میں لکھاگیا۔راشٹرپتی بھون سے متصل شاہراہ پنڈت پنت مارگ پرواقع ریاستی بی جے پی کے دفترمیں جشن یوم تاسیس کے پروگرام میںشام ۴؍بجے سے ہی لوگوں نے آناشروع کردیااورتقریباً۴۵؍منٹ میں جلسہ میں شرکاء بیٹھ گئے۔اس دوران اقلیتی مورچہ کے انچارج عاطف رشیدمائک پرآئے اوربھارت ماتاکی جے،بی جے پی زندہ آباداوروندے ماترم کے نعرے لگانے لگے۔جلسہ میں موجودہ شرکاء کی جانب سے نعروں کاپرجوش جواب نہیں ملنے پرعاطف رشیدنے شرکاء کوسمجھاناشروع کیاکہ بی جے پی کے دفترمیں بی جے پی زندہ آبادکے نعرے زورسے گونجنے چاہئے۔

عاطف رشیدنے مسلسل نعرے لگائے توجلسہ کے شرکاء کی جانب سے بھی جوابی نعرے آنے شروع ہوئے،مگروندے ماترم کے نعرے پرآوازہلکی ہوجارہی تھی۔جس کے بعداقلیتی مورچہ کے انچارج نے کھل کرکہاکہ’پارٹی کے بڑے لیڈران اس پروگرام میں آرہے ہیں،اگرانہوں نے وندے ماترم پرآپ کی طرف سے جوابی نعرے نہیں سنے تووہ کیاسوچیں گے؟۔‘عاطف رشیدشرکاء کووندے ماترم پڑھنے کی مشق کراتے رہے اورمسلسل یہ اعلان کرتے رہے کہ جب وندے ماترم پڑھاجائے توسب لوگ کھڑے ہوجائیں اورایک آوازمیں پوری شدت سے وندے ماترم گنگنائیں۔

پروگرام میں وندے ماترم پڑھنے کی مشق کرانے کے باوجوداگرشرکاء پارٹی کے بڑے لیڈروں کی موجودگی میں وندے ماترم کانعرہ نہیں لگاپائیں توکیاہوگا؟کے سوال پراقلیتی مورچہ کے ترجمان عارف مرزانے کہاکہ’ایسانہیں ہوگاکہ یہاں لوگ وندے ماترم نہ پڑھیں۔وندے ماترم وہی بولے گا،

جس کوملک سے پیارہوگا،جس کواس زمین سے محبت ہوگی۔‘انہوں نے وندے ماترم پڑھنے کی دلیل دیتے ہوئے کہاکہ’یہ لوگ اس دیش میں کھارہے ہیں،اس ملک میں رہ رہے ہیںاس دیش میں پی رہے ہیں،کاروبارکررہے ہیں ،اپنے بچوں کوپڑھارہے ہیں،تووندے ماترم بولیں گے۔‘ایک سوال کے جواب میں انہوں نے بتایاکہ’یوم تاسیس کل تھا،مگرجشن ہم آج منارہے ہیں،کیونکہ کل جمعہ تھااس لئے تھوڑی دشواری تھی۔‘تقریب کے آغازسے قبل شرکاء کوجوڑے رکھنے کے لئے مورچہ کے سربراہ مولاناہارون نے’ بھیگابھیگاموسم‘غزل ترنم میں پڑھ کرسنایا۔

جلسہ میں بی جے پی کے قومی جنرل سکریٹری رام لال جی،قومی نائب صدرشیام ججو،اقلیتی مورچہ کے قومی صدرعبدالرشید،ریاستی بی جے پی کے جنرل سکریٹری سدھارتن،روندرگپتا،راجیش بھاٹیا،نائب صدریوگیتاسنگھ،ترجمان اشوک گویل،انتظامی انچارج گریش سچدیو،کیلاش سنگھ،این ڈی ایم سی کی رکن انیتاآریہ،علی رضازیدی،مصطفی قریشی سمیت اقلیتی مورچہ کے علاقائی ذمہ داران اورمسلم راشٹریہ منچ سے وابستہ نمائندے بھی موجودتھے۔شیام ججونے کہاکہ’آج ہرطبقہ کے لوگ یہ محسوس کرتے ہیں بی جے پی درحقیقت ’سب کاساتھ سب کاوکاس‘کی پالیسی پرچل رہی ہے اورملک کامستقبل بی جے پی کے ہاتھ میں محفو ظ ہے۔اس موقع پرججووطن دوستی کاسرٹی فکیٹ دینے سے نہیں چوکے اورکہاکہ’بی جے پی محب وطن بنانے والی پارٹی ہے۔یہی وہ پارٹی ہے جس نے اے پی جی عبدالکلام(مرحوم)کوملک کاصدربنایا۔
suhailakhtarqasmi@gmail.com

بہ شکریہ روزنامہ  انقلاب نئی دہلی

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *