کجریوال کی حکومت نے ابھی تک نہیں کی دہلی حج کمیٹی کی تشکیل نو 

Asia Times Desk

دہلی اسٹیٹ حج کمیٹی نے کروڑوں روپیہ کے صرفہ سے لگنے والے آصف علی روڈ پر حج کیمپ کو بنا ٹینڈر کےدی منظوری کرپشن کا خدشہ 
نئی  دہلی  : جولائی ماہ کی چار تاریخ سے عازمین حج کی فلائٹس کا دہلی سے سلسلہ شروع ہونے والا ہے مگر کجریوال کی حکومت نے ابھی تک دہلی حج کمیٹی کی تشکیل نو نہیں کی ہے یاد رہے سابقہ صوبائی حج کمیٹی دہلی کی میعاد گزشتہ مارچ کے آخری عشرہ میں ختم ہو گءی تھی

-سماجی کارکن و آرٹی آءی ایکٹیوسٹ محمد شاہد گنگوہی نے اس سلسلے میں دہلی کے لفٹیننٹ گورنر، وزیراعلیٰ اروند کجریوال ،امور حج کے صوبائی وزیر کیلاش گہلوت وڈویزنل کمشنر کو اپنے ایک مکتوب کے ذریعہ مطالبہ کیا ہے کہ صوبائی حج کمیٹی دہلی کی تشکیل نو یا حج امور کی نگرانی کے لیے ایڈہاک کمیٹی بنائی جائے اور آصف علی روڈ پر حج کیمپ ودیگر اخراجات کے لئے ٹینڈر کے ذریعہ ورکس ایوارڈ کیے جائیں جس سے اس پورے عمل کو بد عنوانی سے پاک رکھا جسکے-

گنگوہی کو دہلی کے ڈویزنل کمشنر کے ایک سینئر افسر نے بتایا کہ لوک سبھا انتخابات کے پیش نظر ضابطہ اخلاق نافظ ہونے کے سبب صوبائی حج کمیٹی دہلی کے افسران نے گزشتہ دو سال قبل والے ٹینڈر کو ایکسٹینڈ کرنے کی سفارش کی ہے-گنگوہی نے اس پر اعتراض کرتے ہوئے کہا کہ اسطرح کی سفارش اس عمل کو مشتبہ بناتی ہے کیونکہ یہ ایک روٹین ورک ہےاور اسی لئے ٹینڈر کا عمل ضابطہ اخلاق کی زد میں نہیں آتا ہے علاوہ ازیں صوبائی حج کمیٹی دہلی اسکے لئے عازمین حج کے قرعہ اندازی کے عمل کے فوری بعد ٹینڈر سے متعلق تمام ضروری اقدامات کئے جانے چاہئیں تھے-شاہد گنگوہی نے اپنے بیان میں مزید بتایا کہ انہیں آر ٹی آئی سے موصول اطلاع سے یہ جانکاری بھی ملی ہے کہ کھا نے اور ناشتہ وغیرہ پر جو کوٹیشن منظور کی گءی ہے اس ریٹ کےمطابق طےشدہ اسٹینڈرڈ کے مطابق مینو(menu) میں شامل کوالٹی نہیں سپلائی کی جاتی ہے جس پر ہر سال عازمین کو شکایت ہوتی ہے جسکا ازالہ ہونا ضروری ہے –

گنگوہی نے تعجب کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ عازمین کو یہی سمجھ نہیں آرہاہےکہ صوبائی حج کمیٹی دہلی کو کون چلا رہا ہے ایک جانب” گروپ آف حج اینڈ سوشل ورک آرگنائزیشن ” ہے تو دوسری جانب” حج معلومات گروپ” اور دیگر این جی اوز ہیں جو اپنے اپنے غلبہ کو ظاہر کرنا چاہتی ہیں جنمیں سے کچھ کو صوبائی حج کمیٹی دہلی کے کچھ عملہ کی پشت پناہی حاصل ہے اور اب توآپس میں تحریری  شکایات کا بھی دور چل نکلا ہے جسکو وقت سے پہلے ہی دہلی گورمنٹ کے حج سے وابستہ محکمہ نے بھی بھانپ لیا ہے اور اسی لئے اس مرتبہ نیشنل لیول کے والنٹیر مختلف جگہوں پر تعینات کیے جانے کا فیصلہ کیا ہے –

شاہد گنگوہی نے مرکزی حکومت کے ذریعہ نءی حج پالیسی کا بھی خیر مقدم کیا ہے جسمیں سفارش کی گئی ہے کہ امبارکیشن پوائنٹ ایرپورٹ پاس جاری کرتے وقت اس امر امر کا خیال رکھا جائے کہ یہ پاس کسی غیر سنجیدہ افراد کو جاری نہ ہوں اور عازمین حج کی سیفٹی اور سیکورٹی کو ہر حالت میں یقینی بنایا جائے –

شاہد گنگوہی نے امید ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ مرکزی حج کمیٹی اس مرتبہ دہلی کے امبارکیشن پوائنٹ پر اسکی جانب سے لگنے والے حج ٹرمنل کیمپ میں عازمین حج کی تمام طرح کی ضروریات کو مد نظر رکھتے ہوئے بہتر انتظامات کریگی جسمیں ضرورت کے مطابق بیت-الخلا، وضو خانے، نماز کی ادائیگی کی مناسب جگہ، عازمین کو انٹرنیشنل مسافروں کی مانند دیگر سہولیات میسر ہونی چاہیے جس سے عازمین حج سکون اور بنا ٹینشن امبارکیشن پوائنٹس سے حج کی سعادت کی خاطر روانگی اور آمد کر سکیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *