نئی دہلی : مرکز نے کیمبرج انالائٹک کو نوٹس جاری کرکے اُس سے اُن اداروں کا انکشاف کرنے کو کہا ہے جنہوں نے فیس بک ڈیٹا بیس میں مداخلت کرتے ہوئے مبینہ طور پر بھارتی افراد کا ڈیٹا استعمال کرنے کیلئے اُس کی خدمات حاصل کی ہیں۔ الیکٹرانکس اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کی وزارت نے اِس متنازع ڈیٹا مائننگ کمپنی سے کہا ہے کہ وہ اِس مہینے کی اکتیس تاریخ تک اُس کے چھ سوالوں کا جواب بھیجے۔

ایسا نہ کرنے کی صورت میں اُسے قانونی کارروائی کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ وزارت نے کہا ہے کہ سرکار کو اِس طرح کے حالات وواقعات پر بہت تشویش ہے اور وہ نجی رازداری کے بنیادی حق کے تحفظ اور بھارت کے ہر شہری کے ڈیٹا کی حفاظت اور سیکورٹی کو یقینی بنانے کی پابند ہے۔