ملک گیر سطح پر مسلم نوجوا نوں نے ‘یوم مزاحمت’ منایا؛ دہلی سمیت  ملک کے 20 شہروں میں ہوئے مظاہرے

ملک گیر سطح پر مسلم نوجوانوں نے گلبرگہ ، ممبئی ، بنگلور، گیا ، دھنباد ، سدھارتھ نگر ،سنت کبیر نگر ، باغنگر مئو ، اعظم گڑھ ،بلند شہر ،، حیدرآباد چتوڑر اے ایم یو ، بلیا ،ستارا سے یوم مذاحمت منانے کی اطلاعات ہیں ۔

Asia Times Desk

 نئی  دہلی 🙁 ایشیا ٹائمز / سنسد مارگ سے ابو انس کی رپورٹ) راجدھانی دہلی میں پارلیا مینٹ اسٹریٹ سمیت ملک کی مختلف ریاستوں کے بیس سے زائد شہروں میں آج ایک ساتھ ‘ووٹ ہمارا بات ہماری’ ، ‘سبھی شہری برابر ہیں’ کے ہیش ٹیگ کے پلے کارڈ لیے مسلم نوجوان جمع ہوئے اور ملک میں حالیہ کچھ برسوں میں مسلمانوں کے ساتھ جاری امتیازی سلوک کی پرزور مذمت کی “Day of Resistance”   منایا  اور اپنے شہری حقوق کے تحفظ کے لیے آواز بلند کیا ۔

ملک گیر سطح پر نوجوان ووٹرس  کو بیدار کرنے یہ تحریک اے ایم پی کے صدر عامر ادریسی اور ان کے ساتھیوں نے شروع کی تھی ۔ اس کے لیے  پورے ملک میں تیرہ اکتوبرکی تاریخ طے کی گئی تاکہ ملک کے گوشے گوشے سے اس نا انصافی کے خلاف آواز بلند کی جائے ۔

Today Delhi stands at Sansad Marg for #EqualCitizens

Posted by Ashraf Ali Bastavi on Saturday, 13 October 2018

احتجاج میں شامل لوگوں نے آج کے اس احتجاج کو پہلا قدم بتایا اور 2019 سے قبل ملک بھر میں ووٹرس کو بیدار کرنے کی مہم چلانے کے عزم کا اظہار کیا ۔

ملک گیر سطح پر مسلم نوجوانوں نے گلبرگہ ، ممبئی ، بنگلور، گیا ، دھنباد ، سدھارتھ نگر ،سنت کبیر نگر ، باغنگر مئو ، اعظم گڑھ ،بلند شہر ،، حیدرآباد چتوڑر اے ایم یو ، بلیا ،ستارا سے یوم مذاحمت منانے کی اطلاعات ہیں ۔

اس کے لیے پندرہ روز قبل  سوشل میڈیا ہر ایک کال کی گئی تھی جس میں مسلم اقلیتوں کے ساتھ ہونے بھید بھاو کے برتاو پر تشویش کا اظہار کیا گیا تھا ۔  حکومتی سطح پر ہونے والے بھید بھاو کو اتر پردیش میں ہونے والے دو انکاونٹرس وویک تیواری اور مستقیم کے انکاونٹرس سے سمجھانے کی کوشش کی گئی  تھی ۔ بتایا گیا کہ ایک ہی طرح کے واقعے میں یہ دوہرا رویہ کیوں ،

اس سے پتہ چلتا ہے کہ حکمراں طبقے کے نزدیک مسلمانوں کو کس درجے کا شہری گردانا جاتا ہے اور اپوزیشن بھی اس پورے معاملے پر بغلیں جھانک رہا ہے ۔

پارلیامنٹ اسٹریٹ پر آج کافی اہم بنیادی سوالات کیے گئے اور ملک بھر کے انصاف پسند عوام سے اس مہم میں شریک ہونے کی اپیل کی گئی کہاگیا ہے کہ اہنے آئینی حقوق کے تئیں عوامی  بیداری  یہ سلسلہ یہاں رکنے والا نہیں ہے   ۔

مظاہرین کے اہم مطالبات تھے کہ ہندوستان کا ہر شہری برابر کے معاوضے اور احترام کا حق دار ہے۔ ہندوستان کا ہر شہری کو انصاف کے حصول کا برابری کا  حق ہے۔ہمارے معاشی حقوق کا احترام ہو۔ ہمارے تعلیمی حقوق کا احترامہمارے جینے کے حق کا احترام ہو۔

 

 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *