ڈاکٹرمرسی کی شہادت ان شاء اللہ اسلامی کاز کی تقویت کا باعث بنے گی: امیر جماعت اسلامی ہند

Asia Times Desk

نئی دہلی۔ ”جمہوریہ مصر کے قانونی صدر ڈاکٹر محمد مرسی، جنھیں بہ جبر اقتدار سے بے دخل کر دیا گیا تھا، ان کی اچانک وفات طبعی نہیں، بلکہ حراستی قتل ہے جس کا ارتکاب موجودہ غاصب مصری حکومت اور اس کے خود ساختہ صدر ڈکٹیٹر عبد ا لفتاح سیسی نے کیا ہے۔ ان کی شہادت سے انشاء اللہ پوری دنیا میں اسلامی کاز کو تقویت ملے گی۔“ پریس کو جاری ایک بیان میں جماعت اسلامی ہند کے امیر جناب سید سعادت اللہ حسینی نے ان خیالات کا اظہار کیا۔ انھوں نے دعا کی کہ اللہ تعلیٰ ڈاکٹر مرسی کی شہادت کو قبول فرمائے، انھیں جنت الفردوس میں جگہ دے اور ان کے پس ماندگان کو صبر جمیل عطا فرمائے۔

امیر جماعت نے ڈاکٹر مرسی کی وفات پر اپنے گہرے رنج و غم کا اظہار کیا اور فرمایا کہ ان کی وفات سے عالم اسلام نے اپنا ایک اہم قائد کھو دیا ہے۔

انجینئر حسینی نے کہا کہ قانونی طور پر شفاف انتخابات کے ذریعے بر سر اقتدار آنے والی پارٹی کی حکومت کو بزور قوت ہٹایا جانا جمہوریت کا قتل ہے اوراس پارٹی (اخوان المسلمون) پر پابندی عائد کر کے اس کے کارکنوں اور صدر جمہوریہ پر جھوٹے مقدمات قائم کر کے انھیں جیلوں میں بند رکھنا  اور ہراساں کرنا بنیادی انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔

امیر جماعت نے مطالبہ کیا کہ اس حراستی قتل کی عالمی پیمانے پر تحقیقات کی جائیں اور قصور واروں کو قانون کے دائرے میں لا کر انھیں قرار واقعی سزا دی جائے۔

امیر جماعت نے دنیا بھر کی اسلامی تحریکات کے وابستگان سے تعزیت کی اور انھیں تلقین کی کہ وہ دل برداشتہ نہ ہوں اور راہ حق پر جمے رہیں۔ انشاء اللہ ضرور کام یابی ان کے قدم چومے گی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *