پانچ سال کے بعد بنگال میں سی بی آئی کی کارروائی ،کچھ تو ہےجس کی پردہ داری ہے:نواب کاظم علی خان

Asia Times Desk

نئی دہلی(پریس ریلیز) امبیڈکر نیشنل کانگریس کے قومی صدر نواب کاظم علی خان نے بنگال میں سی بی آئی کے ذریعے ہائی ٹیک ڈرامہ بازی پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا ہے کہ جب سپریم کورٹ2014میں ہی کیس ایشو کردیا تھا تو بنگال پہنچتے پہنچتے سی بی آئی کو پانچ سال کیسے لگ گئے ۔انہوں نے کہا عین وزیر اعظم کی ریلی کے بعد بنگال میں سی بی آئی کو پانچ سال پرانا کیس ہی کیوں ملا ؟کیا یہ سپریم کورٹ کے حکم کی توہین نہیں ہے ؟

 

۔سپریم کورٹ کے حکم دینے کے پانچ سال بعد سی بی آئی بنگال میں متحرک ہوتی ہے اور ڈرامائی انداز میں کارروائی کرنے پہنچ جاتی ہے کیا یہ سی بی آئی کے ذریعے عدالت کی توہین نہیں ہے؟۔ایسے حالات میں کیا بنگال کی ریاستی حکومت نا سمجھ ہے کہ وہ کسی کا اشارہ نہ سمجھ پائے ۔

انہوں نے مزید کہا کہ ان سب کارروائی سے واضح ہے کہ مرکزی سرکار ریاستی سرکاروں کو اپنی ماتحتی قبول کرنے کے لئے غیر دستوری طور پر سی بی آئی کا غلط استعمال کررہی ہے ۔یہی وجہ ہے کہ وہاں کی چیف منسٹر آہنی دیوار بن کر کھڑی ہوگئی ہیں ۔حکومت ہند کو چاہئے کہ وہ تمام محکمہ کو فعال بنائیں اور وقت پر کام کرنے کی صلاح دیں اس سے بہتر کوئی کام ہو ہی نہیں سکتا ہے ۔سی بی آئی کے اس اقدام سے اپوزیشن پارٹی میں تشویش کی لہر درست ہے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *