قومی یومِ تعلیم اور مولانا ابوالکلام آزاد

محمد وسیم

admin

ہر سال 11 نومبر کے دن مولانا ابو الکلام آزاد کی پیدائش کے موقع پر قومی یومِ تعلیم منایا جاتا ہے ، مولانا کی شخصیت ، خدمات نیز تعلیم کے میدان میں ان کے اہم کارناموں سے لوگوں کو آگاہ کیا جاتا ہے ، اس میں کوئی شک نہیں کہ ہندوستان کی آزادی کی تاریخ مولانا آزاد کے بغیر نا مکمل ہے ، مولانا آزاد کی ولادت 11 نومبر 1888 کو مکہ مکرمہ میں ہوئی ، اس کے بعد ان کا خاندان ہندوستان منتقل ہو گیا ، مولانا عالمِ دین ، سیاست داں ، صحافی ، مصلح ، دانشور ، ادیب اور خطیب بھی تھے ، مولانا ماہرِ تعلیم نہیں تھے ، مگر تعلیم کے میدان میں ان کی خدمات اور کارنامے کسی ماہرِ تعلیم سے کم نہیں ، ہندوستان کی آزادی کے بعد مولانا پہلے وزیرِ تعلیم بناےء گئے اور 11 سال تک اس عہدے پر فائز رہے ، اس درمیان انهوں نے تعلیم کے میدان میں بے شمار کارنامے انجام دیئے ، یہی وجہ ہے کہ ان کی پیدائش کے دن کو ہر سال قومی یومِ تعلیم کے طور پر منایا جاتا ہے

مولانا آزاد نے سب سے پہلے 6 سال سے لے کر 14 سال تک کے بچوں کے لئے تعلیم کو فری اور لازمی قرار دیا ، ثانوی اور اعلیٰ سطح کی تعلیم پر زور دیا ، مولانا اعلیٰ تعلیم میں حکومتوں کی مداخلت کے مخالف تھے ، اسی طرح سے مولانا نے تعلیمِ بالغان اور تعلیمِ نسواں پر بھی زور دیا ، مولانا نے نہ صرف مشورہ دیا بلکہ عملی اقدامات بھی کئے ، کئی ادارے قائم کئے ، جن میں UGC کا قیام (1956) ان کا اہم کارنامہ ہے ، سائنس و ٹیکنالوجی کی تعلیم کے لئے IIT اور IIM کے ادارے قائم کیے- غرض کہ ہندوستان میں تعلیم کے فروغ میں بھی مولانا کا اہم کردار ہے- مولانا کے تعلیمی منصوبے اور تجاویز آج بھی اہمیت کے حامل ہیں ، اگر حکومتیں ایمانداری کے ساتھ قومی یومِ تعلیم کے موقع پر مولانا ابو الکلام آزاد کے تعلیمی منصوبے پر کام کریں تو ہندوستان تعلیم کے میدان میں ایک انقلاب برپا پیدا کر سکتا ہے
آخر میں ہم قومی یومِ تعلیم کے دن یہ عہد کرتے ہیں کہ مولانا کی خدمات اور تعلیمی منصوبے اگلے نسلوں تک منتقل کرنے کی کوشش کریں گے اور ہم خود اس پر عمل کر کے ہندوستان کو مثبت اور ترقی کی راہ پر لے جانے میں اہم کردار ادا کریں گے…ان شاء اللہ

محمد وسیم ، ایم- فل ، اردو
جامعہ ملیہ اسلامیہ ، نئی دہلی

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *