این سی پی یو ایل کے ڈائریکٹر کی پہلی پریس کانفرنس: لہجہ قدرے سخت،  لیکن نظروں میں کچھ نیا کر گزرنے کی چمک صاف طور پر دیکھی جا سکتی تھی

ڈیجیٹل میڈیا پر خصوصی توجہ مرکوز کرنے کا کیا وعدہ ، ان  19 نکاتی عزائم کا کیا اظہار، زیادہ بہتر ہوگا شیخ صاحب  آپ اپنی لکیر لمبی کرلیں

Asia Times Desk

نئی دہلی : (ایشیا ٹائمز/اشرف علی بستوی ) قومی کونسل برائے فروغ اردوزبان ،این سی پی یو ایل ان دنوں اپنے نئے ڈائریکٹر شیخ عقیل کی آمد کے پہلے دن سے ہی اردو حلقوں میں زیر بحث ہے ، بدعنوانی کے خاتمے کے تئیں ان کے عزم مصمم سے نہ جانے کتنوں کی تو جان حلق میں آ پڑی ہے ۔ شیخ عقیل نے چارج سنبھالتے ہی جن عزائم کا اظہار کیا تھا اچھی بات ہے کہ آج پندرہ دن بعد بھی اس پر قائم ہیں اورپرعزم بھی نظر آرہے ہیں ۔

Image may contain: 9 people, people smiling, people sitting and indoor

خدا کرے یہ عزائم تین برس تک اسی طرح تازہ دم رہیں

  خدا کرے یہ عزائم تین برس تک اسی طرح تازہ دم رہیں ۔ کونسل میں آج اپنی پہلی پریس کانفرنس میں انہوں نے ایک بار پھر اپنے عزائم کا اعادہ کیا اور کہا کہ  وہ قطعی طور پر بدعنوان لوگوں کے سائے سے خود کو دور رکھیں گے اور این اسی پی یو ایل کوبدعنوانی سے پاک کر کے ہی دم لیں گے ۔ بلاشبہ  بدعنوانی کے خلاف ان کے اس عزم کی تعریف ہونی چاہئے ۔

ایک بار سسٹم میں آنے کے بعد

توقع کے عین مطابق آج پریس کانفرنس کے دوران ان کا لہجہ قدرے سخت ضرور تھا لیکن ان کی نظروں میں کچھ نیا کر گزرنے کی چمک صاف طور پر دیکھی جا سکتی تھی ۔ یقینا یہ ان کی سب سے بڑی حصولیابی ہوگی اگر وہ روایتی سرکاری سسٹم سے نئی راہ نکالنے میں کامیاب ہوگئے۔ ان سے قبل کے ڈائریکٹرس کے عزائم بھی کچھ کم نہ تھے لیکن ایک بار سسٹم میں آنے کے بعد سبھوں نے سسٹم  کا حصہ بن کر رہنے میں ہی عافیت سمجھا ۔ کیونکہ جو بھی یہاں اتا ہے اسے یہاں تین سال کی مدت کار کے لیے موقع دیا جاتا ہے۔ اس لیے ہر آنے والا نظام کا حصہ بن کر اپنی مدت کار پوری کرکے اپنی راہ لیتا ہے ۔

خدا نہ کرے جاتے جاتے  شیخ عقیل کے ساتھ بھی کوئی انہونی ہو

اگر آپ کویاد ہو! بدعنوانی سے دور رہنے اورکونسل کو بدعنوانی سے پاک کرنے کا شیخ عقیل کا عزم  وزیر اعظم نریندرمودی کے عزم سے ہوبہو میل کھاتا ہے جس کا اظہار انہوں نے اقتدار سنبھالتے ہی  کیا تھا ،کہا تھا نہ ‘کھاوں گا نہ کھانے دوں گا ‘ لیکن مودی جی کے اس عزم کا حشر کیا ہوا گزشتہ ساڑھے چار برس میں کتنے ہزار کروڑ لیکر وجے مالیا ، میہول چوکسی جیسے لوگ رفو چکر ہوگئے اوراب  جاتے جاتے خود وزیر اعظم  کی گردن رافیل میں پھنس گئی۔ خدا نہ کرے جاتے جاتے  شیخ عقیل کے ساتھ بھی کوئی انہونی ہو ۔  ابھی تو وہ پرجوش پرزور لہجے میں جابجا یہ کہہ رہے ہیں کہ آپ سبھی محبان اردو سے میری دست بستہ درخواست ہے کہ میرے کاموں کا حساب سختی سے لیتے رہیں گے اور اپنے قیمتی مشوروں سے بھی نوازیں گے ہم سب نے چوکیدار اور پردھان سیوک کا لفظ بھی سن رکھا ہے  یہ سننے میں اچھا ضرور لگتا ہے ۔ یہ اچھی بات ہے صحیح معنوں میں کسی بھی جمہوری ملک کے سرکاری ادارے کی یہی شان ہونی چاہئے ۔ کہ وہ عوام کی شمولیت کو یقینی بنائے  ۔

لیکن ابھی سب سے بڑی مشکل یہ ہے

شیخ عقیل کے لیے یہ کام ناممکن اس لیے نہیں ہے کہ وہ این سی اپی یو ایل کے لیے حکومت کے پسندیدہ نمائندے ہیں حکمراں طبقے کی اہم ترین شخصیات کی قربت انہیں حاصل ہے اس لیے متعلقہ وزارت میں وہ اپنی بات کافی باوزن طریقے سے رکھ سکتے ہیں اور کسی بھی پروپوزل کو بڑی آسانی سے پاس کرا سکتے ہیں ۔ لیکن ابھی تو ان کے سامنے  سب سے بڑی مشکل یہ ہے کہ وزارت نے گزشتہ ایک سال سے کونسل کی ایگزیکیٹیو باڈی ہی تشکیل نہیں دی ہے ۔ پہلے مرحلے میں انہیں چاہئے کہ وہ جلد ازجلد ایگزیکیٹیو باڈی کی تشکیل کی فکر کریں کیونکہ یہی باڈی ڈائریکٹر کو کام کرنے کے تمام اختیارات منتقل کرتی ہے اورپرپوزلس کو ہری جھنڈی دیتی ہے ۔

کونسل کی ڈائریکٹر شپ ایک عجیب و غریب قسم کی پیچیدہ ذمہ داری والا کام ہے

کونسل کی ڈائریکٹر شپ ایک عجیب و غریب قسم کی پیچیدہ ذمہ داری والا کام ہے ۔  شیخ عقیل کے لیے  بڑا چیلنج یہ ہے کہ وہ اردو کا کھویا ہوا وقار اور مقام کیسے دلائیں گے کیونکہ ابھی کچھ ماہ قبل ہی ہندوستان میں اردو کے حوالے سے دل خراش اور غم ناک  خبریہ آئی ہے کہ  اردو زبان جو  چھٹے مقام پر تھی اب ساتویں مقام پر جا پہونچی ہے یعنی اردو حلقہ دن دن بدن محدود تر ہوتا جارہا ہے  ۔

جگر مرادآبادی نے بہت پہلے ہی کہہ دیا تھا ۔۔۔۔۔

یہ عشق نہیں آساں بس اتنا ہی سمجھ لیجے

اک آگ کا دریا ہے اور ڈوب کے جا نا ہے

تو کیا اردو نیوز پورٹلس کےاچھےدن آنے والے ہیں ؟

ان کے زبانی یہ بھی معلوم ہوا کہ کونسل ہندوستان بھر میں اردو کی بقا کے لیے 1600 اردو اخبارات کو اشتہارات  کے ذریعے آکسیجن فراہم کرتی ہے ۔ انہوں نے ایشیا ٹائمز کے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ ہاں ابھی تک اردو ڈیجیٹل کا کوئی بجٹ نہیں تھا لیکن اب ضرور اردو نیوز پورٹلس کو مالی تعاون کی کوئی شکل نکالی جائے گی ۔

شیخ صاحب  آپ اپنی لکیر لمبی کرلیں

 شیخ عقیل کو چاہئے کہ انہیں جو کچھ وقت ملا ہے اسے انتقامی کاروائی میں ضائع کے بجائے  اپنے کام سے کسی لکیر کو مٹانے میں توانائی صرف کرنے کے بجائے اپنی لکیر لمبی کرلیں ان کی جانب سے یہ سب سے بڑا جواب ہوگا یہ زیادہ مناسب ہے اور محفوظ بھی کیونکہ تین سال بعد انہیں بھی آخر کار این سی پی یو ایل کو الوداع کہنا ہوگا ۔

جن عزائم کا اظہار کیا ہے ان پر ایک نظر

  1. میں این سی پی یو ایل کو مافیا سے پاک کروں گا
  2. میں این سی پی یو ایل کو لابنگ سے دور رکھوں گا
  3. ہم ہندوستان کے ہر اسٹیٹ میں ضلعی سطح پر سمینار کرائیں گے
  4. گم نام ادیبوں شاعروں اور اردو کے خادموں ایوارڈ دیا جائے گا
  5. ہم ایوارڈ انہیں دیں گے جنھیں کبھی نہیں دیا گیا
  6. میڈیا میں ایسے لوگوں کا انٹرویو کرایا جائے گا جو صحیح معنوں اردو کے خادم ہیں لیکن پردے سے دور ہیں ان کی نشاندہی کی جائے گی
  7. میں رشوت کے سخت خلاف ہوں آپ میرے بارے میں کسی بھی طرح کی بدعنوانئ کی شکایت پائیں اسے منظر عام پر لائیں ۔
  8. اب صرف پروفیسروں اور ان کے رفقاء کی ہی کتابیں نہیں شائع ہوں گیں بلکہ عام لوگوں کی تصانیف کو ترجیح دی جائے گی ۔
  9. اردو رسم الخط میں ہی اردو کی خوشبو ہے ہم اسے ہرگز ختم نہیں ہونے دیں گے
  10. اردو زبان کی ترویج واشاعت میں سرگرم افراد کی نشاندہی کی جائے گی
  11. اردو کونسل کا صرف شیخ عقیل ہی ڈائریکٹر نہیں ہے بلکہ ہر اردووالا ڈائریکٹر سے کم نہ سمجھے اپنی تجاویز اور مشورے ہم تک پہونچائے
  12. اردو صحافیوں کی صلاحیت سازی کے لیے تربیتی ورک شاپ ہوگی
  13. ایسی کتابیں شائع کی جائیں گیں جن سے قاری کو فائدہ ہو
  14. داستانوں کو دستی کتابی شکل میں عام کیا جائے گا
  15. اردو کی تعلیم پر توجہ مرکوز کی جائے گی
  16. اردو ڈیجیٹل کے لیے اشتہارات یا کسی اور طریقے سے مالی تعاون کریں گے
  17. اردو کو گیر اردو حلقوں ، تمل ، کنڑ، ملیالم اور دوسری علاقائی زبانوں کے ذریعے ان حلقوں کو سکھانے کے لیے اردو لرننگ کورس کے تراجم کرائے جائیں گے ۔
  18. ہم مدرسوں سے مل کر انہیں سائنس و ٹیکنالوجی کی تعلیم پر آمادہ کریں گے
  19. شمال مشرق کی ریاستوں میں اردو کا دائرہ بڑھایا جائے گا

 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *