اس سرعت کیلئے شکریہ صدر صاحب

Asia Times Desk

ہندوستانی عوام کتنے خوش بخت ہیں کہ آزاد ہند کی تاریخ میں انہیں پہلی بار اتنے سریع العمل صدر جمہوریہ ملے ہیں کہ کل الیکشن کمیشن نے عام آدمی پارٹی کے 20 ممبران اسمبلی کی رکنیت ختم کرنے کی سفارش کی اور آج صدر جمہوریہ نے اس سفارش کو منظور کرکے ان کی رکنیت ختم بھی کرڈالی۔۔۔۔

واہ۔۔۔اسے کہتے ہیں فرض شناسی’ عمل آوری اور کام کے تئیں دیانتداری ۔۔۔۔۔

صدر جمہوریہ کی فرض شناسی دیکھئے کہ آج اتوار کا دن ہے۔۔۔۔ان کے دفاتر بند ہیں ۔۔۔ان کے اعلی حکام چھٹی پر ہیں ۔۔۔مگر انہوں نے اتوار کی چھٹی کی بھی پروا نہیں کی اور حکم صادر کردیا۔۔۔۔

حیرت اس پر ہے کہ وزارت قانون کے افسران بھی بے چارے اپنی چھٹی کو غارت کرکے آج اس کی تیاری میں لگے رہے کہ ایوان صدر سے حکم آئے اور وہ اسے جاری کریں ۔۔۔۔کتنی فرض شناس اور سریع العمل ہے ہماری حکومت۔۔۔۔؟ اگر دیر ہوجاتی تو قیامت نہ آجاتی۔۔۔؟ اس لیے صدر جموریہ واقعی شکریہ کے مستحق ہیں ۔۔۔

اور دیکھئے۔۔۔۔کمال تو یہ ہے کہ کل یہ بے چارے راندہ درگاہ ممبران اسمبلی دہلی ہائی کورٹ بھی گئے تھے ۔۔۔وہاں جج صاحبہ نے فوری راحت تو دی ہی نہیں ساتھ ہی سخت سست بھی سناڈالیں۔۔۔۔اب اس کی سماعت کل یعنی پیر کے روز ہوگی۔۔۔۔

صدر صاحب سے یہ پوچھنے کی جرات کون کرے گا کہ حضور کل تک کا انتظار کرلیتے۔۔۔ہائی کورٹ سے ان بے چاروں کی اپیل مسترد ہونے کا انتظار کرلیتے۔۔۔۔آپ سے بھی ان بے چاروں نے وقت مانگا تھا ۔۔۔ان کی سن لیتے پھر یہی کردیتے جو اب کیا ہے۔۔۔۔کم سے کم آپ کے تعلق سے یہ بدگمانی تو نہ ہوتی۔۔۔۔ایوان صدر کا وقار تو باقی رہ جاتا۔۔۔یہی ایک جگہ غیر متنازعہ رہ گئی تھی۔۔۔سو وہ بھی گئی ۔۔۔۔

کیا ظلم ہے کہ پہلے ان بے چاروں کی الیکشن کمیشن نے نہیں سنی۔۔۔

پھر جج صاحبہ نے نہیں سنی۔۔۔بلکہ انہیں سنادی۔۔۔

اور اب آپ نے بھی نہیں سنی صدر صاحب۔۔۔۔

اب آپ ہی بتائیے کہ ظلم کے مارے لوگ کہاں جائیں ۔۔۔

۔۔۔۔۔۔۔کوئی مجھ جیسے فقیر سے پوچھے تو کہوں کہ ابھی ایک جگہ باقی ہے۔۔۔۔ایک کمیشن باقی ہے۔۔۔ایک عدالت باقی ہے۔۔۔۔ایک صدر الصدور باقی ہے۔۔۔۔دیر ہے مگر اندھیر نہیں ۔۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *