ایس آئی او ممبئی کی “یونیورسٹی کب پاس ہو گی ” مہم 8ستمبر تا 17 ستمبر ، وقت پر نتائج نہ جاری کرنے سے ناراض ہیں طلبا

Asia Times Desk

 ممبئی : اسٹوڈنٹس اسلامک آرگنائزیشن آف انڈیا (ایس آئی او )جنوبی مہاراشٹرا کی جانب سے ریاستی سطح پر 8 ستمبر تا 17 ستمبر 2018 “یونیورسٹی کب پاس ہوگی”کے عنوان سے مہم کا انعقاد کیا جارہا ہے ۔مہم کا بنیادی مقصد ریاست کی مختلف یونیورسٹیوں کے ایگزامینیشن ڈپارٹمنٹ کی ناکامیوں کو اجاگر کرنا اورتعلیمی نظام الاوقات ( اکیڈمک شیدیول) کی سختی سے پابندی ، رزلٹ،ری چیکنگ اور ریوالیوشن کے نتائج بروقت جاری کرنے کا مطالبہ کرنا ہے۔
گذشتہ کئی سالوں سے ریاست کی تمام یونیورسٹیوں نےامتحانات کے نتائج جاری کرنے کے معاملے میں انتہائی خراب کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے ۔مہاراشٹرا کی کوئی یونیورستی وقت پر نتائج جاری نہیں کرتی ،یہاں تک کہ امتحانات کے انعقاد کے معاملے میں بھی اکیڈمک شیڈیول کی پاسداری نہیں کی جاتی ۔
اکیڈمک شیڈیول پرتاخیر سے عمل ہونے کی وجہ سے طلباء کی پڑھائی کا نقصان ہوتا ہے جس کے نتیجے میں انہیں تناؤ سے دوچار ہونا پڑتا ہے۔کچھ ایسے بھی معاملات ہوئے ہیں جن میں رزلٹ تاخیر سے جاری ہونے کی بناء پر طاجاء کا مکمل ایک اکیڈمک سال برباد ہوا ہے،کیونکہ وہ اس صورت میں اعلیٰ تعلیم کےلئے ایڈمیشن نہیں لے پائے۔
جوابی پرچوں کی دوبارہ جانچ (ری چیکنگ) اور ریوالیوشن کا عمل بھی کسی قسم کی ڈیڈلائن کے بغیر حد درجہ تاخیر سے انجام پاتا ہے۔امتحانی پرچے وقت پر جانچے نہیں جاتے اور یونیورسٹی کی جانب سے بے تحاشہ فیس وصول کرتے ہوئے طلباء کو پریشان کیا جاتا ہے۔یہ یونیورسٹی کے لئے غیر مناسب طریقے سے آمدنی کا بڑا ذریعہ بن چکا ہے۔
 
کیا ہے ایس آئی اوجنوبی مہاراشٹرا کا مطالبہ
1. یونیورسٹی کے تعلیمی نظام الاوقات(اکیڈمک کیلنڈر ) کی سختی کے ساتھ پابندی کی جائے ۔
2. امتحانات کے نتائج کسی بھی صورت میں اندرون 45 ایام اور ری چیکنگ و ریوالیوشن کے نتائج اندرون 30 ایام جاری کئے جائیں۔
3. ری چیکنگ اور ریوالیوشن کی فیس حتی المقدور کم کی جائے۔
4. ری چینگ و ریوالیوشن میں مارکس میں تبدیلی کی صورت میں فیس کی رقم واپس کی جائے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *