ٹیکساس فائرنگ:مرنے والوں کی تعداد 20 ہوگئی

Asia Times Desk

واشنگٹن ،4اگست(یو این آئی) امریکی ریاست ٹیکساس کے سرحدی شہر ال پاسو میں فائرنگ سے 20 افراد ہلاک اور 26 زخمی ہوگئے۔ اس واقعہ میں شامل 21 برس کے ایک مشتبہ سفید فام شخص کو حراست میں لیا گیا۔
ٹیکساس پولیس کے سربراہ گریگ ایلن نے کہا ہے کہ اس معاملے میں ایک مشتبہ افراد کو گرفتار کیا گیا ہے جس میں 21 سالہ ایک نوجوان بھی شامل ہے۔ انہوں نے کہا کہ معاملے کی جانچ چل رہی ہے.

ٹیکساس پولیس نے کہا کہ بیشتر لوگوں کی موت ال پاسو مال میں ہی ہوئی. انہوں نے کہا کہ جس وقت یہ حملہ ہوا اس وقت اسٹور میں تقریبا تین ہزار لوگ موجود تھے.پولیس چیف نے کہا کہ فائرنگ کی تحقیقات نفرت انگیز جرم کے تناظر میں کی جارہی ہے،ملزم سے برآمد مواد میں ممکنہ نفرت انگیز جرم کے اشارے ملے ہیں۔ امریکی میڈیا کے مطابق فائرنگ کرنے والے شخص کانام پیٹرک کروسیس ہے جو ڈیلس کا رہنے والا ہے۔
ٹیکساس کے سیلو وسٹہ مال میں فائرنگ کا یہ واقعہ دوپہر کے وقت پیش آیا، ویک اینڈکی وجہ سے شاپنگ مال میں اس وقت لوگوں کی نسبتاًزیادہ تعدادہوتی ہے۔

حملہ آور نے فرار ہونےکی کوشش کی تاہم پولیس نے بروقت کارروائی کرتےہوئے اسے حراست میں لے لیا۔
امریکی میڈیا نے20 افراد کی موت کادعویٰ کیا ہےتاہم اٹارنی جنرل نے 15اموات کی تصدیق کی ہے۔

انٹراسٹیٹ 10 کےمشرقی جانب مال میں فائرنگ کے بعدلوگوں کو خبردار کیا گیا تھا کہ وہ علاقے سے دور رہیں۔ یہ علاقہ میکسیکو کی سرحد کے قریب ہے۔
واقعہ پر ردعمل میں امریکہ کےصدر ٹرمپ نے کہا کہ بری اطلاعات آرہی ہیں،کئی لوگ مارےگئے ہیں۔ انہوں نے گورنر ایبٹ سے بات کرکے مکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی۔
ٹیکساس کےگورنر گریگ ایبٹ نے واقعہ کو بے رحم تشدد قرار دیتے ہوئے سخت الفاظ میں مذمت کی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *