ترک صدر رجب طیب ایردوان 9 جولائی کو حلف اٹھائیں گے، جانیں ان کو حاصل ہونے والے اختیارات

Asia Times Desk

اشتہار

 انقرہ : ترک صدرجب طیب ایردوان 9 جولائی بروز سوموار کو ترکی کی قومی اسمبلی میں حلف اٹھا کر صدارتی فرائض کا آغاز کر دیں گے۔

  24 جون کو منعقدہ صدارتی انتخابات میں کامیابی کے بعد  ایردوان 9 جولائی کو قومی اسمبلی کی جنرل کمیٹی میں دن 4 بجے حلف اٹھائیں گے۔

تقریب حلف برداری کے بعد صدارتی سوشل کمپلیکس میں صدارتی نظام حکومت کے آغاز کی تقریب کا انعقاد ہو گا۔

 ایردوان کے حلف اٹھانے اور اسی دن کابینہ کے اعلان کے ساتھ ملک میں صدارتی نظام حکومت کا آغاز ہو جائے گا۔

اسمبلی میں ممبران کی رجسٹریشن کا کام بھی جاری ہے۔

ستائیسویں  ٹرم تقریب حلف برداری کے لئے قومی اسمبلی کی جنرل کمیٹی کا اجلاس 7 جولائی  بروز ہفتہ دن 2 بجے منعقد ہو گا۔

آئین کی شقوں میں تبدیلیوں کے بعد اب ترک صدر رجب طیب ایردوآن کو جو اضافی اختیارات حاصل ہوں گے ان میں سے چند درج ذیل ہیں۔

چار جولائی بروز بدھ ایک سرکاری حکم نامے کے تحت ترک آئین کی 74 دفعات میں تبدیلیاں کی گئیں جس کے بعد صدر کو مزید اختیارات مل جائیں گے۔

 

ترک صدر کو حاصل ہونے والے اختیارات

اشتہار

 

  • نئی وزارتیں تشکیل دے کر ان کی کارکردگی پر بھی نظر رکھ سکیں گے۔ اس کے علاوہ اب وہ پارلیمان کی منظوری کے بغیر سرکاری افسروں کو معطل کر سکیں گے۔
  • صدر ججوں اور دفتر استغاثہ کے بورڈ کے چار ارکان تعینات کر سکیں گے جب کہ ملکی پارلیمان بورڈ کے سات ارکان تعینات کرے گی۔
  • صدر ملکی بجٹ بنا سکیں گے اور ملکی سکیورٹی پالیسی کے بارے میں بھی فیصلہ کر پائیں گے۔
  • پارلیمان کی منظوری کے بغیر صدر ایردوآن ملک میں چھ ماہ تک کی مدت کے لیے ایمرجنسی نافذ کر پائیں گے۔
  • صدر ایردوآن کو ملکی پارلیمان تحلیل کرنے کا اختیار بھی حاصل ہو گا۔ تاہم اس صورت میں قبل از وقت صدارتی انتخابات بھی کرانا ہوں گے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *