آنگن با ڑ ی مرا کز کی حالت

Asia Times Desk

بستی زون (ایشیا ٹائمز )حکومت کے زیر انتظام چلنے والی اسکیم ترقی و فلاح و بہبو د اطفال و خواتین ،آنگن با ڑ ی مرا کز کی حالت ،جانچ اور معا ینہ کے باوجود بیکار ثابت ہورہی ھے ،حکومت کی طرف سے دئے گیے غذ ا ؤ ں اور خوراکوں کو جہاں بازاروں میں کھلے عام بیچا جا رہا ھے وھیں کیی مراکز بند بھی پڑے ہیں ۔حکومت کی طرف سے اسکو لوں میں رجسٹریشن نہ کرانے والے بچوں کو تعلیم دلانے ،حاملہ خوا تین اور بچیوں کے صحت کو ٹھیک رکھنے کے لیے گا ؤ ں گاؤں میں آنگن با ڑی مراکز کو قایم کر کے تعلیم دلانے اور خوراک وغیرہ مہیا کرانے کی ھدایت کی گیی تھی اس کے لیے آنگن با ڑی میں کام کرنے والوں اور معا و نین کی تقر ر ی بھی عمل میں لائی گیی تھی .

حکومت کی طرف سے ہر مرکز پر خوراک و غذا وغیرہ مہیا کرایا جاتا ھے لیکن گاؤں میں شاید ہی کوئی مرکز ھو جو چل رہا ھو اور جو چل مرکز چلتا بھی ھے وہ محض خانہ پری ہی تک محدود ھے جب کہ اس کے لیے مخصوص طور پر ملا ز مین کی تقر ر یا ں بھی ہیں جن میں آنگن با ڑی مرا کز کی جانچ ،حکومت کی طرف سے دئے گیے ساما نوں کی تقسیم اور تعلیمی بیداری کے کام کو دیکھنا بھی ھے ،

جو شاید ہی گاؤں میں جا کر دیکھ بھال کرتی ہوں،ایسے میں صرف کاغذ وں میں ہی نگرانی کر لی جاتی ھے ،یہ بھی افسوس ناک پہلو ھے کہ زیادہ تر گاؤں کے لوگوں کو پتہ ہی نہیں ھے کہ انکے گاؤں میں آنگن با ڑی کا سنٹر ھے ،اتنا ہی نہیں کھلے عام بازاروں میں 250اور 300روپنے میں فی بوری غذا ییں بیچی جا رہی ہیں اگر حکومت کی طرف سے سنجیدگی سے کارر وائی ڈھنگ سے نہیں کی گیی تو یہ اسکیم صرف کاغذ وں تک ہی محدو د ھو کر رہ جائے گی ۔۔۔۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *